اللہ کے رسول صلّی اللہ علیہ و سلم کا ارشاد ہے کہ جنت تلواروں کے سایہ تلے ہے۔ یہی وجہ ہے کہ دیدارِ باری تعالیٰ، رسولوں کا پڑوس، اور جنتیوں کی ابدی حیات کے شوق میں نکلنے والے حضرات و خواتین جب حقائق سے روشناس کروادیے جاتے ہیں تو پھر دنیا کی کوئی طاقت انکو اللہ کا دین، جو ہر چار سو فوز و فلاح کی نوید پیش کر رہا ہے قبول کرنے سے نہیں روک پاتی۔ بعد ازاں آزمائشوں کا ایک ایسا دور جاری ہوجاتا ہے جیسے چڑھائی سے نیچے کو پانی آتا ہے۔ قبولِ اسلام کے بعد گھر سے نکال دیا جانا، بچوں کا چھن جانا، مکان، سامان، جائیداد کا ضبط، سکول و نوکریوں سے نکال دیا جانا، مار کٹائی، جھوٹے مقدمات میں ملوث کروادینا، یہاں تک کہ جان سے ماردینے کے واقعات بھی کسی سے ڈھکے چھپے نہیں ہیں۔ بعض اوقات ہماری عدم توجہ اور لا پرواہی سے کچھ لوگ جان و ایمان کی بازی ہی ہار جاتے ہیں۔ عمومی طور پر خواتین کو ان شدید مسائل کا سامنا کرنا پڑتا ہےاور ہمارے پاس بھی خصوصاً خواتین کے لئے کوئی ایسی مستقل ومحفوظ تربیت گاہ نہ ہونے کی وجہ سے ہم اِن اسلام کے مہاجرین کے لئے وہ کردار ادا نہیں کر پارہے جو کہ انصارکا سا ہونا چاہئے۔ اِس مقصد کے لئے ہمارے ادارے حقوق الناس ویلفئیر فاؤنڈیشن (سنٹر فار نو مسلمز) کو صاف ستھرا اور مناسب جگہ پر ایک ایسا گھر درکار ہے جس میں نا صرف نومسلم خواتین کی مختصر وقت میں تعلیم و تربیت کی جاسکے بلکہ انکی حفاظت کا بھی بھرپور انتظام کیا جاسکے۔ آپ تمام احباب سے درخواست ہے کہ ان مہاجرین اِسلام کے لئے انصار کی سنت کو زندہ کرنے میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیجئے۔ بارک اللہ فیکم عبد الوارث گِل 0321-4115721

Categories: Article's