“تحریر ایک نو مسلم کے قلم سے” کچھ سال پہلے ہمارے خاندان کا ایک فرد اپنے پورے گھرانے سمیت حلقہ بگوش اسلام ہوگیا اسلام قبول کرتے ہی قدرت نے آزمائش کی چکی میں ڈال دیا گردشِ ایام نے زور پکڑا تو خاندان والوں نے سوشل بائیکاٹ کردیا پرائے تو پرائے قیامت صغریٰ ہوتی ہے جب اپنے بھی پرائے ہوجائیں خیر غربت تو پہلے ہی گھر کا فردِ خاص تھی اہلیہ شوگر کی وجہ سے مختلف بیماریوں کا شکار ہو گئی بیٹی کو طلاق ہوگئی مگر یہ بندہِ خدا اسلام پر ثابت قدم ہی رہا شدید ذہنی دباؤ اور مختلف وجوہات کی بنا پر شہر تبدیل کرلیا شاید کہ حالات بھی تبدیل جائیں مگر ابھی عشق کے امتحاں اور بھی ہیں کے مصداق کچھ عرصہ قبل پہلے سانس اور پھر شوگر کے مرض میں خود بھی مبتلا ہو گئے اور پھر طبعیت تھی کہ دن بدن بگڑتی ہی گئی پاؤں کی انگلی پر ایک چھوٹا سا ذخم بنا علاج کے باوجود ذخم بڑھتا ہی چلا گیا رہی سہی کسر ڈاکٹروں کی لاپرواہی نے پوری کردی چھے ماہ ہسپتال جاتے رہے مگر مجال ہے کہ پہلی بار کے علاوہ ڈاکٹروں نے پاؤں کا ذخم دوبارہ دیکھنے کی زحمت بھی گوارا کی ہو بغیر دیکھے ہی پٹی کرنے کا حکم صادر فرماتے رہے جب درد اور پاؤں کی صورت حال برداشت سے باہر ہوگئی تو پرائیویٹ ڈاکٹر سے رابطہ کیا مگر تب تک بہت دیر ہو چکی تھی ڈاکٹروں نے فوری آپریشن کا فیصلہ کیا اور زندگی بچانے کے لئے آپریشن سے آدھی ٹانگ کاٹنی پڑی 2 دن پہلے جب ملنے کے لئے ہسپتال گیا تو گلے لگ کر خوب روئے کیونکہ انکی عیادت کو آنے والا انکے خاندان کا میں ایک واحد شخص تھا میں نے ٹانگ سے محرومی کا افسوس کرنا چاہا تو کہنے لگے عبد الوارث میں اپنے رب سے راضی ہوں دعا کریں وہ بھی مجھ سے راضی ہو جائے ویسے تو وقتاً فوقتاً اپنی ضروریات و مسائل کا تذکرہ کرتے رہتے مگر باوجود انتہائی غربت و مصائب کے کبھی شکوہ نہیں کیا اور نہ ہی اسلام کا دامن ہاتھ سے جانے دیا. بس یہی کہتے رہتے تھے میں اپنے رب سے راضی ہوں دعا کریں وہ بھی مجھ سے راضی ہو جائے. شاید مندرجہ ذیل خوشخبری ایسے ہی لوگوں کے لئے ہے الَّذِیۡنَ اِذَاۤ اَصَابَتۡہُمۡ مُّصِیۡبَۃٌ ۙ قَالُوۡۤا اِنَّا لِلّٰہِ وَ اِنَّاۤ اِلَیۡہِ رٰجِعُوۡنَ ان لوگوں پر جب کوئی مصیبت واقع ہوتی ہے تو کہتے ہیں کہ ہم خدا ہی کا مال ہیں اور اسی کی طرف لوٹ کر جانے والے ہیں اُولٰٓئِکَ عَلَیۡہِمۡ صَلَوٰتٌ مِّنۡ رَّبِّہِمۡ وَ رَحۡمَۃٌ ۟ وَ اُولٰٓئِکَ ہُمُالۡمُہۡتَدُوۡنَ ‏‏یہی لوگ ہیں جن پر ان کے پروردگار کی مہربانی اور رحمت ہے اور یہی سیدھے راستے پر ہیں. تحریر بقلم : عبد الوارث گِل

Categories: Article's