کرّہِ ارض پر مدینہ منورہ کے بعد پاکستان وہ واحد ریاست ہے جو اسلام کے نام پر معرضِ وجود میں آئی۔ ہماری نوجوان نسل کو ہمیشہ یہ بات یاد رکھنی چاہیے کہ یہ سب ہمارے آباء کی قربانیاں ہیں، انکی طویل جدوجہد ہے کہ آج ہم اس پرسکون فضاؤں میں سانس لے رہے ہیں۔ جس کے لئے لاکھوں مسلمانوں نے ناصرف اپنے مال و متاع کی پروا نہ کی بلکہ اپنی جانوں تک کو قربان کردیا۔ چشمِ فلک نےاس سے قبل ایسا منظر نہیں دیکھا ہوگا کہ جہاں ماؤں کے جگر گوشوں کو نیزوں پر اچھالا جارہا ہو، عزت مآب عورتوں کی عزتوں کو لوٹا جا رہا ہو، جوان اور بزرگوں کے سینے چھلنی کئے جا رہے ہوں۔ کیا ہی قریب تھا کہ زمین پھٹ جاتی اور آسمان گرجاتا۔ یہ تاریخ انسانی کی سب سے بڑی ہجرت نہیں بلکہ آگ اور خون کا ایک سمندر تھا جیسے عبور کیا جارہا تھا۔ اور یُوں اس وطن عزیز کی تعمیر کے لئے اینٹ گارہ کی جگہ مسلمانوں نے بچوں کے کٹے ہوئے سر، ماؤں بہنوں کی لٹی ہوئی عزتوں، اور اپنے گھبرو جوان اور بزرگوں کی لاشوں سے اس وطنِ عزیز کی بنیاد رکھی۔ اس کی تعمیر میں پانی کی جگہ میرے شہیدوں کا خون استعمال ہوا، تب جاکر ایک اسلامی اور فلاحی ریاست کا قیام عمل میں آیا جسکو آج پوری دنیا پاکستان کے نام سے جانتی ہے۔ پاکستان ناصرف برِصغیر کے مسلمانوں کے لئے عطیہ خداوندی ہے بلکہ اس وقت پوری اُمتِ مسلمہ کی امیدوں کا مرکز و محور بھی ہے۔ اب ہماری یہ ذمہ داری ہے کہ اَرض پاک کی قدر کریں اور اللہ کا شکر بجا لاتے ہوئے اسکی حفاظت اور ترقی کے لئے اپنا بھر پور کردار ادا کریں۔ اِسلامی اور فلاحی ریاست پاکستان کے ذمہ دار شہری ہونے کے ناطے ہم سب پر یہ لازم ہے کہ ایک حقیقی مسلمان کا کردار ادا کریں تاکہ وطن عزیز جس مقصد کے لئے حاصل کیا گیا تھا یعنی لا الہ الا اللہ اس کا عملی نمونہ پیش کرسکیں۔ بحیثیت ایک نو مسلم اپنے تمام نو مسلم بہن بھائیوں کی طرف سے اس یومِ آزادی کے پر مسرت موقع پر تمام پاکستانیوں کو مبارک باد پیش کرتا ہوں اور وطن عزیز پاکستان میں بسنے والے تمام غیر مسلم بہن بھائیوں کو دعوتِ اسلام پیش کرتا ہوں تاکہ آخرت میں حقیقی آزادی، دائمی سلامتی اور ابدی فلاح سے بھی ہمکنار ہو سکیں۔ پاکستان زندہ باد عاجز: عبد الوارث گِل

Categories: Article's